نوبیل انعام برائے کیمیا 2020 دو خواتین نے اپنے نام کرلیا

نوبیل انعام برائے کیمیا 2020 دو خواتین نے حاصل کرلیا۔نوبل انعام فرانسیسی خاتون پروفیسر ایمانوئیل چارپینٹیئر اور امریکی بائیو کیمسٹ جینیفر اے ڈوڈنا کو دیا گیا ہے۔ رواں سال کا نوبل انعام برائے کیمیا 2020 کا اعلان کیا گیا۔ غیرملکی خبر رساں ادارےکی رپورٹ کے مطابق نوبیل کمیٹی کی جانب سے اعلان کیا گیا کہ دونوں خواتین نے حالیہ برسوں کے دوران جین ایڈیٹنگ کی جدید ترین تکنیک ‘کرسپر’ ایجاد کی ہے۔

یاد رہے کہ رواں سال فزکس کے نوبیل پرائز 2020 راجر پینروز،رین ہارڈ گینزیل اور اینڈریاگیز کے حصے میں آیا تھا۔خبرایجنسی کے مطابق مشترکہ نوبیل انعام برطانیہ، جرمنی اور امریکی سائنسدانوں کو دے دیا گیا۔ راجر پینروز برطانوی، رین ہارڈ گینزیل جرمنی اور اینڈریاگیز کا تعلق امریکا سے ہے۔
خبرایجنسی کے مطابق تینوں ماہرین کو بلیک ہول پر تحقیق کی وجہ سے نوبیل انعام سے نواز گیا۔

اس سے قبل رواں سال کا نوبیل انعام برائے طب 3 امریکی شخصیات کو دے دیا گیا تھا۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق طبی ماہرین ‎‏الٹر، ہیوگٹن اور رائس کو نوبل انعام ہیپاٹائٹس سی وائرس کی دریافت پر دیا گیا تھا۔خیال رہے کہ متحدہ عرب امارات ( یو اے ای) اور اسرائیل کے مابین کامیاب امن معاہدہ کرانے پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو 2021 کے نوبل امن انعام کے لئے نامزد کیا گیا ہے۔
غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق صدرٹرمپ کا نام ناروے کے رکن پارلیمنٹ کرسٹیان تبرنگ نے نوبل امن انعام کے لیے نامزدگی کے لیے پیش کیا ہے۔اس ضمن میں بات کرتے ہوئے کرسٹیان تبرنگ نے کہا کہ دیگر نامزد امیدواروں کے مقابلے میں امریکی صدر نے ملکوں کے درمیان امن قائم کرنے کے لیے زیادہ کوششیں کی ہیں۔وائٹ ہاؤس کے ایک عہدیدار نے اعلان کیا ہےکہ امریکی صدر 15 ستمبر کو اسرائیل اور متحدہ عرب امارات کے درمیان امن معاہدے پر دستخط کے لیے ایک خصوصی تقریب کا انعقاد کریں گے.جبکہ صدر ٹرمپ نے خود بھی یہ دعویٰ کیا ہے کہ مجھے کئی کاموں کے لیے نوبیل انعام ملنا چاہیے۔

جواب دیں

This site is protected by wp-copyrightpro.com