یونان نے ترکی سے غیر قانونی طور پر آنے والے مہاجرین کو ڈی پورٹ کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

یونان نے ترکی پر زور دیا ہے کہ وہ ترکی سے یونان میں داخل ہونے والے غیرقانونی مہاجرین کو روکنے کے لیے اقدامات کرے۔

دوسری صورت میں یونان ترکی سے غیر قانونی طور پر یونان میں داخل ہونے والے مہاجرین کو دوبارہ ترکی بھیجنے کا اختیار رکھتا ہے۔

یونان حکومت کے نمائندے نے کہا کہ حکومتی سطح پر اس بات پر زور دیا جارہا ہے کہ یونان میں آنے والے غیرقانونی مہاجرین کی حوصلہ شکنی کی جائے اس لیے کہ یونان کے جزائر پہلے ہی مہاجرین سے بھرے ہوئے ہیں۔

واضح رہے کہ ترکی اور یورپی یونین میں ایک معاہدہ 2016 میں طے پایا تھا جس کے مطابق ترکی ایسے تمام افراد کو واپس لینے کا مجاز ہے جو ترکی سے یورپی یونین میں داخل ہوں گے۔

اگر اس سال دیکھا جائے تو پچھلے سال کی نسبت سو گنا زیادہ مہاجرین ترکی سے یورپی یونین کے پہلے ملک یونان میں داخل ہوئے پچھلے سال اسی مہینے 480 مہاجرین یونان میں داخل ہوئے تھے اس سال 1560 مہاجرین ترکی سے یونان میں داخل ہوئے جو کہ پچھلے سال کی نسبت بہت زیادہ اضافہ ہے۔

اسی وجہ سے یونان میں حکومتی سطح پر خاص طور پر اور عوامی سطح پر عام طور پر بے چینی پائی جاتی ہے کہ مہاجرین کے مسائل پر قابو پایا جائے۔

جواب دیں

This site is protected by wp-copyrightpro.com