اٹلی سے فرانس تک تیز رفتار ریل رابطے، لاگت چھبیس ارب یورو

دنیا میں ایسا شاید ہی کبھی ہوا ہو کہ بہت تیز رفتار بین الاقوامی ریل رابطوں کا کوئی منصوبہ حکومت کے لیے خطرہ بن گیا ہو۔ ایسا اٹلی میں ہوا لیکن اب روم حکومت کے لیے اس وجہ سے پیدا ہونے والا خطرہ ٹل گیا ہے۔

اٹلی میں کافی عرصے سے ایک منصوبہ زیر غور تھا کہ اطالوی شہر ٹیورین سے فرانس کے شہر لیوں تک ایک ایسا نیا لیکن بہت تیز رفتار ریل رابطہ قائم کیا جانا چاہیے، جو یورپی یونین کے رکن متعدد ممالک میں زمینی سفر کے لیے دستیاب موجودہ سہولیات کو مزید بہتر اور ماحول دوست بنا سکے۔

لیکن اٹلی میں یہ منصوبہ روم میں حکمران مخلوط حکومت میں شامل جماعتوں کے مابین اس بارے میں اختلافات کے باعث بہت متنازعہ ہو گیا تھا۔ اطالوی وزیر اعظم کونٹے اس منصوبے کے حق میں تھے۔

دوسری طرف مخلوط حکومت میں شامل بڑی جماعت اگر اس کی مخالف تھی تو دائیں باز وکے عوامیت پسند ملکی وزیر داخلہ ماتیو سالوینی کی پارٹی اس کی حامی تھی۔

اب سالوینی کی پارٹی سیاسی دباؤ ڈال کر بڑی حکومتی پارٹی کو اس امر کا قائل کرنے میں کامیاب ہو گئی ہے کہ یہ متنازعہ ریلوے ٹریک اب تعمیر ہو ہی جانا چاہیے۔

 

جواب دیں

This site is protected by wp-copyrightpro.com