میمورنڈم کے بعد یونانیوں نے دوبارہ دوسرے ممالک میں کرسمس منانا شروع کر دیا۔

 میمورنڈم کے  بعد یونان ایک مرتبہ پھر خوشحالی کی جانب گامزن ہے اور اس کی واضح مثال ملتی ہے یونانیوں کے طرز زندگی سے یونانیوں نے ایک مرتبہ پھر یونان کی بجائے دوسرے یورپی ممالک میں جاکر کرسمس منانا شروع کردیا۔

تفصیلات کے مطابق یونان سے دوسرے یورپی ممالک کو جانے والے یونانیوں کی تعداد میں اس سال بیس فیصد تک اضافہ دیکھا گیا۔

یونانیوں نے لندن ،برلن، پیرس، سوئٹزرلینڈ اور یورپ کے دوسرے ممالک کا رخ کرنا شروع کردیا جہاں پر کرسمس منانے کے لئے لوگوں کی بڑی تعداد جمع ہوتی ہے اور ہر سال مختلف قسم کے پروگرام منعقد کئے جاتے ہیں۔

یونانیوں کی سب سے بڑی تعداد برلن کا رخ کرتی ہے جہاں پر برانڈنبرگ گیٹ کے پاس ایک لاکھ کا مجمع جمع ہوتا ہے اور مختلف قسم کے بینڈ اپنے فن کا مظاہرہ بھی کرتے ہیں یورپ کے دوسرے شہروں کی نسبت برلن میں ابھی تک مینگائی کم ہے اور یونانیوں کو کم قیمت میں آرائش اور کھانا پینا میسر آسکتا ہے جس کی وجہ سے زیادہ تر یونانی برلن کا رخ کرتے ہیں تاکہ کم خرچ  ہو اور انھیں تفریح بھی مل جائے۔

جواب دیں

This site is protected by wp-copyrightpro.com