اپنے بچے کو مار کر فریزر میں رکھنے والی عورت جیل سے رہا۔

آج پاترا کی ایک عدالت نے ایسی عورت کو رہا کردیا جس نے 2013 میں اپنے بچے کو مار کر فریزر میں رکھ دیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق 31 سالہ عورت 2013 میں پکڑی گئی تھی جب اس نے اپنے بچے کو مارا اور اس لیے کہ  کسی کو پتہ نہ چل سکے اس نے اپنے بیٹے کو فریزر میں رکھ دیا۔

بعدازاں بچے کے باپ نے بیٹے کو تلاش کرتے ہوئے فریزر سے نکال لیا اور پولیس کو اطلاع کر دی پولیس نے 31 سالہ عورت کو گرفتار کرلیا اور عدالت نے 12 سال کی سزا سنائی۔

اکتیس سالہ عورت کی خاتون وکیل کا کہنا تھا کہ جن حالات میں یہ عورت بڑی ہوئی ہے ان حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے یہ کہا جا سکتا ہے کہ اس کی ذہنی کیفیت ٹھیک نہیں ہے اور اس وجہ سے اس کی سزا میں کمی کی ۔

وکیل کی جانب سے دلائل دیتے ہوئے کہا گیا کہ 31 سالہ عورت نے اپنی زندگی کے 19 سال مشکل حالات میں گزارے اور 10 سال کے عمر میں اس کے ساتھ قریبی رشتے داروں نے بہت سی زیادتیاں بھی کیں جس کی وجہ سے اس کی ذہنی حالت میں بہت زیادہ تناؤ پیدا ہو چکا تھا اور اسی تناؤ کی وجہ سے اس نے اپنے بچے کو مار کر فریزر میں رکھا۔

آج پاترا کی عدالت نے 31 سالہ عورت کی سزا میں کمی کر کے اسے رہا کردیا اور امید ظاہر کی کہ آئندہ سے وہ کوئی ایسی حرکت نہیں کرے گی۔

جواب دیں

This site is protected by wp-copyrightpro.com